ایک واقعہ ایک معجزہ

Image
آج اُمِّ حبیبہ بہت خوش تھی ، کافی دنوں بعد اس کی کزن ہانیہ اور حفصہ آئی تھیں ، ہانیہ نے کہا : آج ہم اتنے دنوں بعد ملے ہیں باتیں بھی بہت کرلیں ، اب اورکیا کریں
Image
دادا جان نے صہیب کی طرف دیکھتے ہوئے کہا : صہیب ! آپ پارک جاکر کیا کروگے ؟ صہیب نے کہا : میں بھی یہ سب کام کروں گا ، مگر ایک کام اوربھی کروں گا۔
Image
صہیب نے شاپر میں جھانکتے ہوئے کہا : امّی جان اور دکھائیے ! میرے لئے کیاخریدا ؟ امی جان نے کہا : آپ کیلئے تو ہم کچھ بھی نہیں لائے ، ہم تو بس آپی کی شاپنگ کرنے گئے تھے۔
Image
آج خُبیب اورصہیب کے گھر پر قربانی تھی ، داداجان اپنے دوست کے گھر گوشت دینے گئے تو وہ دونوں بھی ساتھ ساتھ چلے گئے۔ صہیب نے راستے میں کہا
Image
اتنی ساری کھجوریں!! صُہیب فریج کھولے کھڑا تھا اور حیرت سے کھجوروں کو دیکھ کرکہہ رہا تھا۔ اس نے ایک کھجور منہ میں ڈالی اور دوسری ہاتھ میں لیتے ہوئے کہا
Image
اُمِّ حبیبہ نے کہا : صُہیب کیا تلاش کررہے ہو؟صہیب نے کہا : جھاڑو ڈھونڈرہا ہوں۔ اُمِّ حبیبہ ہنستے ہوئے بولی : کیوں! آج گھر کی صفائی تم کروگے ؟صہیب نے فوراًکہا
Image
دادا جان نے کہا : صبح سے دوپہر ہوگئی ہے ، صہیب کا کچھ پتا بھی ہے؟ ناشتے کے بعد سے تو نظر ہی نہیں آیا۔ خبیب نے کہا : مجھے تو لگتا ہے آج وہ گھر بھی نہیں آئے گا
Image
خُبیب اور اُمِّ حبیبہ داداجان کے کمرے میں گئے تو صُہیب بھی پیچھے پیچھے آگیا۔ داداجان نے ان کی طرف دیکھتے ہوئے کہا : آج بچّے خود آئے ہیں ضرور کوئی بات ہے
Image
دونوں بھائی لیٹے لیٹے کتاب پڑھ رہے تھے۔ کمرے میں صرف ایک چھوٹا سا بلب جل رہا تھا۔ داداجان نے جب یہ دیکھا تو پہلے کمرے کی لائٹیں جلائیں پھر ان کے پاس جاکر بیٹھ گئے۔